शासन की उपलब्धियां

تقریباً 12 سال پہلے بہار کی عوام نے مکمّل امید اور اعتماد کے ساتھ حکومت کی باگڈ ور شری نتیش کمار کوسونپی۔ شری کمار ےا سال 2005 میں قانون کی بالادستی قائیم کرنے اور انصاف کے ساتھ ترقی کی راہ پرچلنے کا عزم لیا۔ سماج کے سبھی طبقوں کو ساتھ لیکر انہوں نے گڈ گورننس ،  شفافیت اور سبھی کی ترقی کے اصولوں پر حکومت کی بنیاد رکھی۔ پہلے سال 2005 – 2010 کے لئے اور اسکے بعد ابھی تک گڈ گوورننس کے  پروگرام بنائے رکھے۔انہوں نے پوری ایمانداری اور دلجوئی سے " گڈ گوورننس " کے پروگرام پر منحصر پالیسی ،  پروگرام اور منصوبہ بندی کو عملی جامہ پہنژچایا ۔ حصولیابیاں ، امکانات اور چیلینجز سے بھر پور اس سفر میں شری نتیش کمار کو ریاست کی عوام کابھر پور تعاون اور حمایت مل رہا ہے ۔

                  کچھ سال کی مدًت میں ہی انہوں نے کئی عوامی اداروں اور انتظامیہ کی تجدید کیا۔ اس سفر میں جہاں ایک جانب موثر نظم و ضبط  قانون کی  بالادستی قائیم کرنے میں کامیابی ملی  وہیں دوسری جانب انسانی وسائل کے ساتھ ساتھ زمینی سطح کا بنیادی ڈھانچہ کی  ترقی میں شری نتیش کمار نے کئی نئی بلند یوں کو حاصل کیا ۔ لوگوں کے ذ ہن میں تحفظ اور عزم کی فضا تیار ہوئی  جسکے اثرات کو شہر اور گاوًں میں اقتصادی اور سماجی سرگرمیاں میں دیکھا جا سکتا ہے۔ سماج کے کمزور ، وسائل سے محروم اور ترقی سے نابلد طبقوں کو اولیت دیتے ہوئے انہوں نے بہار کی ترقی کیلئے  ایک نئی سمت کا تصور کیا۔

                 ریاست میں نظم و ضبط قائیمکر قانون کی  بالادستی قائیم کرنا شری نتیش کمار کی اول اور عظیم ترجیح رہی ہے۔ بغیر کسی تفریق سے قانونی ضابطوں اور قانونی طریقئہ کار  پر عمل کرتے ہوئے انہوں نے جرائم پر قابو اور مجرموں کو غیرموثر کرنے کے لئے سخت انتظام کیا ، جسکا نتیجہ  چہار جانب دیکھا جا سکتا ہے۔ منظم جرائم پر سختی سے روک لگایا گِا۔ عدالتوں سے رابطہ قائم کر کے اسپیڈی ٹرائیل سسٹم کا نظم کیا گیا جسکے نتیجہ میں عدالتوں کے زریعے بڑی تعداد میں مجرموں کو سزا سنائی گئی۔ آبادی کے تناسب کے مطابق ریاستی پولس میں آسامیوں کی بحالی کے ساتھ ساتھ   پولس کو سبھی ضروری وسائل دستیاب کراتے ہوئے انکی انکی جد ید یت پر خاص توجہ دی گئی۔ غیرسماجی عناصر کے زریعے جہاں کہیں بھی نفرت پیدا کرنے یا فرقاورانہ ماحول پیدا کرنے کی  کوشش کی گئی تو انہوں نے فوری کاروائی کرتے ہوئے لوگوں سے مواصلات قائیم کر سختی سے ان واقعات پر قابو پایا جسکے نتیجہ میں جہاں ایک جانب شہریوں کے دلوں میں تحفظ کا احساس پیدا ہوا  ، وہیں دوسری جانب مجرموں میں قانون کا خوف پیدا ہوا۔ آج لوگ کبھی بھی کسی بھی وقت زاتی اور سماجی کاموں کے  لئے اپنے نشیمن سے نکل سکتے ہیں۔ تحفظ اور جشن کے اس احساس کو الفاظ و شمارات میں نہیں ماپا جا سکتا ہے۔

                            زیرو ٹولرنس یعنی صفر رواداری کی  پالیسی اپنا کر بدعنوانیوں کے خلاف شری نتیش کمار کع مہم جاری و ثاری ہے۔ قانونی اور ادارتی انتظام کر بدعنوان ملازمین کے خلاف موثر کاروائی کی گئی ۔

                        کرائم انویسٹیگیشن بیرو ، مخصوص نگرانی اکائی اور اقتصادی جرم کی اکائی کے زریعے بدعنوانی میں ملوث ، آمدنی سے زیادہ  جائیداد جمع کرنے اور عہدے کے غلط استعمال کرنے والے لوک سیوکوں کے خلاف معاملے د ر ج کر انہیں سزا دلانے اور انکی غیر قانونی جائیداد کو ضبط کرنے کی  منظم کاروائی کی گئی۔ ملک میں  پہلی مرتبہ ضبط غیرقانونی جائیداد کی  عمارتوں میں غریب اور معزور بچوں کے لئے اسکول کھولے گئے۔